تمام تر سوشل موبلائزیشن کے باوجود خواتین پر تشدد بڑھ رہا ہے:پروفیسر ڈاکٹر محمود قریشی

 

خان پور (خواجہ محمد زبیر)پنجاب ایجوکیشن NGOsنیٹ ورک (PEN) کے صوبائی کوارڈینٹر پروفیسر ڈاکٹر محمود قریشی نے کہا ہے کہ تمام تر سوشل موبلائزیشن کے باوجود خواتین پر تشدد بڑھ رہا ہے یہی وجہ ہے کہ خودکشیوں کی تعداد میں بے پناہ اضافہ ہوگیا ہے وہ یہاں جوہر سوسائٹی پاکستان کے زیر اہتمام خواتین پر تشدد کے خاتمہ کا عالمی دن کے حوالے سے منعقدہ مجلس مذاکرہ سے خطاب کررہے تھے انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی اور بے روزگاری کیوجہ سے گھریلو تشدد میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے پسند کی شادیوں نے قتل وغارت گری میں اضافہ کیاہے لیکن افسو س اس امر پر ہے کہ قانون سازی کے باوجود خواتین پر تشدد کے حوالے سے قوانین پر عمل درآمد نہیں ہورہا پولیس اور دیگر ایجنیساں امن وامان کی صورتحال اور دہشت گردی کی وجہ سے بوکھلا ئی ہوئی ہیں اور خواتین پر تشدد کی معمولی معاملہ سمجھ کر ڈیل کیا جارہا ہے انہوں نے کہاکہ مہذب معاشروں میں خواتین پر تشدد کے واقعات کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا لیکن ہمارا معاشرہ اس حوالے سے جنگل کی تصویر پیش کررہا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں عورتوں کے حقوق کی حالت نہایت خستہ ہے اور یہاں “ملالہ ” جیسے واقعات کھلے عام ہورہے ہیں این جی اوز کو تشدد کے خاتمہ کیلئے “ڈائیلاگ” شروع کرنا ہوگا اور معاشرے میں ڈائیلاگ کے ذریعے اسے ختم کرنا ہوگا اس موقع پر ڈاکٹر صبا الماس خالق ، نادیہ ارم ، روبینہ اختر ، ناظم بلو چ ، خواجہ سجاد فصیح، جام عبدالمجید جاوید اور دیگر افراد موجود تھے ۔

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *