انڈیا سے آئے ہوئے 7افراد 15سال سے چولستان میں روپوش

 

خان پور (نامہ نگار) انڈیا سے آئے ہوئے 7افراد چولستان میں روپوش مقامی رہائشی ٹاوٹ ماہانہ بھتہ لیکر 15سال سے سرپرستی کرنے میں مصروف پاکستانی موبائل سموں کے ذریعہ انڈیامیں مقیم رشتہ داروں سے بھی رابطے سکیورٹی پرانچ نے بھی انکھیں بند کرلیں چک 216ٹو آر کے سکونتی رئیس زاہد ولد صوبھانے صدر پاکستان ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس سمیت حساس اداروںکو تحریری درخواست دی ہے کہ حوراں زوجہ خانوخان ،حکیماں دختر خانوخان ،کمال ولد خانوخان ،صلی دختر خانوخان سلمیت دختر خانوخان ،کمالی دختر خانوخان 24اپریل 1998ء میں قانونی طور سے پاکستان آئے مگر واپس نہ گئے 15سالوں سے ان غیر قانونی رہائش پذیر خواتین کی سرپرستی چک 152سیون آر کا سکونتی ٹاوٹ محمد شریف ولد غلام دین کررہاہے درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ان افراد کے زیر استعمال ٹیلی نار کمپنی کی سموں کے ذریعہ انڈیا کے لئے جاسوسی کا کام بھی آتی ہیں ان پاسپورٹوں کی معیاد بھی گذشتہ 10سالوں سے ختم ہوگئی ہے یہ لوگ سکیورٹی پرانچ رحیم یارخان کے اہلکاروں کی مبینہ معاونت سے سکونت پذیر ہیں جبکہ ایک شخص خانو ولد ستار پاکستان میں فوت ہوگیاہے درخواست میں فوری کاروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے درخواست دہندہ نے  موقف اختیار کیا ہے کہ وہ گرفتاریوں میں معاونت کرنے کو بھی تیار ہے ۔۔

 

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *